GCU forms Girls Cricket Club

GCU forms Girls Cricket Club

The Government College University Lahore has formed its first ever Girls Cricket Club, and appointed two distinguished Ravians and international cricket players Sidra Amin and Ayesha Zafar as coaches of its female cricket team.

 

The announcement was made by Vice Chancellor Prof. Dr. Asghar Zaidi at the University’s Annual Inter-Departmental sports where Sidra Amin and Ayesha Zafar, our national women’s cricket team players, were the Guest of Honors.

 

Speaking on the occasion, Vice Chancellor Prof. Zaidi laid stress on providing equal opportunities to women in all fields of life including sports. He said students who play sports have higher levels of confidence and lower levels of depression.

 

The Vice Chancellor directed the GCU Sports Board to provide equal attention and facilities to the University’s Girls Cricket team and hold their cricket camps.

 

Faculty members Sumaira Khalil (English Department) and Kanita Shah (Institute of Industrial Biotechnology) are appointed as President and Vice President of the Women Cricket Club.

جی سی یونیورسٹی میں گرلز کرکٹ کلب قائم

گورنمنٹ کالج یونیورسٹی لاہور میں پہلا گرلز کرکٹ کلب قائم،بین الاقوامی کھلاڑی سدرہ امین اور عائشہ ظفر یونیورسٹی کرکٹ ٹیم کی کوچ مقرر۔کرکٹ کلب کے قیام کا اعلان وائس چانسلر پروفیسر ڈاکٹر اصغر زیدی نے یونیورسٹی کے سالانہ انٹر ڈیپارٹمینٹل کھیلوں کے موقع پر کیا،جبکہ اس موقع پر قومی کرکٹ ٹیم کے کھلاڑی سدرہ امین اور عائشہ ظفر مہمان خصوصی تھیں۔اس موقع پر خطاب کرتے ہوئے وائس چانسلر پروفیسر ڈاکٹر اصغر زیدی نے کھیلوں سمیت زندگی کے تمام شعبوں میں خواتین کو مساوی مواقع فراہم کرنے پر زور دیا۔ انہوں نے کہا کہ جو طلبا کھیل کھیلتے ہیں ان میں اعلی سطح کا اعتماد ہوتا ہے اور ذہنی دباؤ کا شکار بھی نہیں ہوتے۔وائس چانسلر نے جی سی یو اسپورٹس بورڈ کو ہدایت کی کہ وہ یونیورسٹی کی گرلز کرکٹ ٹیم کو یکساں توجہ اور سہولیات فراہم کریں اور ان کے کرکٹ کیمپ لگائیں۔فیکلٹی ممبران سمیرا خلیل (شعبہ انگریزی) اور کنیتا شاہ (انسٹی ٹیوٹ آف انڈسٹریل بائیوٹیکنالوجی) کو گرلز کرکٹ کلب کا صدر اور نائب صدر مقرر کیا گیا۔

Give a Reply